Home / pakistan News / بینظیرانکم پروگرام کے نام کی تبدیلی، نام تبدیل کرنا سازش ہے: بلاول بھٹو

بینظیرانکم پروگرام کے نام کی تبدیلی، نام تبدیل کرنا سازش ہے: بلاول بھٹو

شکار پور: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے نام کی تبدیلی کو سازش قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ غریبوں کے دشمن بی آئی ایس پی ختم کرنا چاہتے ہیں۔
بلاول بھٹو سندھ کے شہر شکارپور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکمران 18 ویں ترمیم ختم کرنا چاہتے ہیں، 18 ویں ترمیم کا خاتمہ وفاق کے لیے اچھا نہیں ہوگا، حکمرانوں کی سوچ صرف امیروں کو مزید امیر بنانا 
ہے۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ٹرین مارچ میں سندھ کے غیرت مند باسیوں نے استقبال کیا۔ پی پی چیئرمین نے کہا کہ پیسے کی کمی کے باعث صوبے کو ترقیاتی بجٹ میں کمی کا سامنا ہے، اور وفاق کی طرف سے فنڈز نہ ملنے پر کافی مشکلات کا سامنا ہے۔
سکھر میں بلاول بھٹو نے پارٹی رہنماؤں کے ہم راہ مدیجی کے جنگلات کا دورہ کیا، اس موقع پر انھوں نے کہا کہ سندھ کے جنگلات کے تحفظ کو ہر قیمت پر یقینی بنائیں گے، جنگلات پر قبضہ کرنے والی مافیا کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔
وزیر اعظم عمران خان  نے سندھ دورے کے دوران اتحادی جماعتوں کے اراکین کے ساتھ ملاقات کے دوران ان کے مطالبے پر بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
اسلام آباد:  بینظیر انکم پروگرام کا نام بدلنے کے معاملے پر پیپلز پارٹی نےحکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کر لیا۔ حکومت قانون میں ترمیم لائے بغیر نام نہیں بدل سکتی۔ پی پی رہنما خورشید شاہ کہتے ہیں کہ لگتا ہے اب یہ ملک آئین کے مطابق نہیں۔ عمران خان کی خواہش کے مطابق چلے گا۔
ذرائع کے مطابق بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام تبدیل کرنا حکومت کے لیے ایک مشکل امتحان ثابت ہو گا کیونکہ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام ایکٹ آف پارلیمنٹ کے تحت منظور کیا گیا، نام تبدیل کرنے کے لیے قانون میں ترمیم کرنا پڑے گی، قومی اسمبلی سے حکومت سادہ اکثریت سے قانون میں ترمیم کرا سکتی ہے، سینٹ میں حکومت کی اکثریت نہیں، وہاں منظوری میں دشواری ہو گی۔ حکومت عارضی طور پر آرڈیننسس کے ذریعے نام بدل سکتی ہے اس کو بھی 120 روز کے بعد قومی اسمبلی میں لانا ہو گا۔
دوسری طرف پیپلز پارٹی کا کہنا ہے کہ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام تبدیل کرنے کی مخالفت کریں گے، پی پی رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ لگتا ہے اب یہ ملک آئین کے مطابق نہیں عمران خان کی خواہش کے مطابق چلے گا، یہ جمہوری نہیں آمرانہ حکومت ہے۔
خورشید شاہ نے مزید کہا کہ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام بدلنے کی کوشش کامیاب نہیں ہو گی۔ جس طرح ضیا الحق اور مشرف کی طرح عمران خان سے بھی جیو بھٹو کا نعرہ ہضم نہیں ہو رہا۔ اسلام آباد میں بھٹو کا نعرہ لگا نے پر بھی ہمارے کارکنوں کو جیل بھیج دیا گیا، لگتا ہے ضیا الحق کی روح کی اب عمران خان میں گھس آئی ہے۔

About admin

Check Also

آصف علی زرداری کی گرفتار,اور کل یوم سیاہ منانےکا اعلان

پیپلز پارٹی سندھ نے آصف زرداری کی گرفتاری پر کل یوم سیاہ منانے کا اعلان …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *