Home / pakistan News / بلاول بھٹو کی قیادت میں پیپلزپارٹی کا کاروان بھٹو اپنی لاڑکانہ پہنچ گیا

بلاول بھٹو کی قیادت میں پیپلزپارٹی کا کاروان بھٹو اپنی لاڑکانہ پہنچ گیا

پیپلزپارٹی کا کاروان بھٹو ٹرین مارچ رات گئے اپنی منزل مقصود لاڑکانہ پہنچ کر اختتام پذیر ہوگیا،جہاں جیالوں کی بڑی تعداد بلاول بھٹو کے استقبال کیلئے پہلے سے ہی موجود تھی۔
جیالوں نے بلاول کا والہانہ استقبال جئے بھٹو کے نعروں سے کیا، پارٹی ترانوں پر بھنگڑے ڈالے اور بلاول پر پھول بھی نچھاور کئے۔
کاروان بھٹو منگل کو کراچی سے روانہ ہوا تھا، بلاول بھٹو نے 2روزہ سفرکے دوران 24 مقامات پر کارکنوں سے خطاب کیا۔
بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ قائد عوام نے شہادت قبول کی، آمر کے سامنے سر نہیں جھکایا، بھٹو کا نواسہ جھکنے، ڈرنے اور بھاگنے والا نہیں، ملک سے کرپشن ختم کرنے کیلیے انتقام نہیں، بلاامتیاز احتساب کا نظام ہونا چاہیے،احتساب کے نام پر پولیٹیکل انجینیرنگ قبول نہیں۔
چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے 4اپریل کو لاڑکانہ میں جلسہ کرنے کا بھی اعلان کیا۔
بلاول بھٹونے کہا کہ گھرپہنچ گیاہوں،آپ سب کا شکرگزارہوں ،4اپریل کوقائدعوام کوخراج عقیدت پیش کریں گے،4اپریل کولاڑکانہ میں جلسہ کریں گے،قائدعوام نےشہادت قبول کی لیکن عوام سےدھوکا نہیں کیا۔
انہوں نے مزید کہا کہ احتساب سےجمہوریت مضبوط ہوتی ہے،پیپلزپارٹی کو احتساب سے کوئی اعتراض نہیں،احتساب کے نام پر انتقام قبول نہیں،خان صاحب،آپ فکرنہ کریں ہم آپ کی حکومت نہیں گرائیں گے۔
چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ ذوالفقار علی بھٹو کے دیئے گئے آئین پر آنچ نہیں آنے دیں گے، قائدعوام نے کبھی نظریئےسے یوٹرن نہیں لیا، یہ صوبے کے اختیارت چھیننا چاہتے ہیں، کسان، مزدور کا معاشی قتل ہو رہا ہے، احتساب سے جمہوریت مضبوط ہوتی ہے، احتساب کے نام پر سیاسی انتقام قبول نہیں۔
انہوں نے کہا کہ گھرپہنچ گیاہوں، آپ سب کا شکرگزار ہوں، 4اپریل کو قائد عوام کا40واں یوم شہادت ہے، اس دن ذوالفقارعلی بھٹو کو خراج عقیدت پیش کریں گے، قائدعوام نے شہادت قبول کی، عوام کو دھوکا نہیں دیا، احتساب کے نام پر انتقام قبول نہیں کریں گے۔
بلاول بھٹوکا کہنا تھا کہ پنجاب میں پیپلزپارٹی کا راستہ روکا گیا، پیپلزپارٹی کو پشاور میں انتخابی مہم چلانے نہیں دی گئی،ب پیپلزپارٹی کا راستہ روکنے کیلئے سارے ہتھکنڈے استعمال کئے گئے، پارٹی کے وفاداروں کو نااہل کیا گیا، پی پی سمجھتی ہے جمہوریت میں انصاف ہوتا ہے۔
چیئرمین پی پی نے کہا کہ آغاسراج کے گھر پر حملہ کیا گیا، بیوی، بچوں کو یرغمال بنایا گیا، پیپلزپارٹی کو احتساب سے اعتراض نہیں، نیب گردی سے اعتراض ہے، قائم علی شاہ جیسے شریف آدمی کو بھی نیب بلا رہا ہے، قائم علی شاہ کو نیب تنگ کر رہا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ 1973 کا آئین ذوالفقار علی بھٹو کا دیا ہوا ہے، ذوالفقار علی بھٹو کے دیئے گئے آئین پر آنچ نہیں آنے دیں گے، یہ صوبے کے اختیارت چھیننا چاہتے ہیں، کسان، مزدور کا معاشی قتل ہو رہا ہے، احتساب سے جمہوریت مضبوط ہوتی ہے، احتساب کے نام پر سیاسی انتقام قبول نہیں۔
مجھ سے وہ سوال کیے جارہے ہیں جب میں ایک سال کا تھا، سازش کے تحت بینظیر کا راستہ روکنے کیلئے نیب کے کیسز بنائے گئے، نیب سے نہیں ڈٖرتے، کسی کا خوف نہیں ہے، پہلے بھی نیب کاسامنا کیا ہے، کرپشن ختم کرنے کیلئے انتقام نہیں، بلاامتیاز احتساب کا نظام ہونا چاہیے۔

About admin

Check Also

آصف علی زرداری کی گرفتار,اور کل یوم سیاہ منانےکا اعلان

پیپلز پارٹی سندھ نے آصف زرداری کی گرفتاری پر کل یوم سیاہ منانے کا اعلان …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *